42.1 C
Delhi
مئی 19, 2024
Samaj News

ہنڈن برگ کی رپورٹ کے بعد کیا اڈانی اپنی سلطنت بچا پائیں گے؟

نئی دہلی: ہنڈن برگ ریسرچ رپورٹ کے بعد سے اڈانی کی سلطنت پوری طرح سے ہل گئی ہے۔ گوتم اڈانی کو نہ صرف لاکھوں کروڑوں روپے کا نقصان ہوا ہے بلکہ کمپنی کے حصص بھی اسٹاک مارکیٹ میں مکمل طور پر گر چکے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق ہنڈن برگ رچرز کی رپورٹ کے بعد اڈانی گروپ کی مارکیٹ کیپ کو 120 بلین ڈالر سے زیادہ کا نقصان ہوا ہے۔ اس سب کے درمیان گوتم اڈانی ہندن برگ کے جھٹکے سے نکلنے کے لیے ایک نیا منصوبہ بنا رہے ہیں۔ اگر رپورٹوں پر یقین کیا جائے تو گوتم اڈانی کی زیرقیادت جماعت نے اپنے ریونیو میں اضافے کے ہدف کو آدھا کر دیا ہے اور ساتھ ہی، اپنے سرمائے کے اخراجات کو مؤخر کرنے کے منصوبے پر کام کر رہی ہے۔
اڈانی گروپ کا کیا ہے منصوبہ؟
بلومبرگ کی رپورٹ کے مطابق گوتم اڈانی کے گروپ نے اپنے ریونیو ٹارگٹ کو بڑھانے کا ہدف آدھا کر دیا ہے۔ معلومات کے مطابق گروپ اگلے مالی سال میں اپنی آمدنی میں اضافے کو 15 سے 20 فیصد تک محدود کر سکتی ہے۔ جبکہ گروپ کا ہدف پہلے 40 فیصد تھا۔ اس کے علاوہ گروپ نے اپنے سرمائے کے اخراجات کو کم کرنے کی منصوبہ بندی شروع کردی ہے۔ اگر ماہرین پر یقین کیا جائے تو یہ گروپ جس طرح سے اپنے پروجیکٹس کے ساتھ ترقی کر رہا تھا، اس پر بریک لگائے گا اور اپنی مالی صحت کو مضبوط بنانے کو ترجیح دے گا۔ اس کا مطلب ہے کہ پورٹ ٹو پاور گروپ کی توجہ اب نقد رقم رکھنے، قرضوں کی ادائیگی اور گروی رکھے ہوئے حصص واپس لینے پر ہوگی۔
سرمایہ کاری پر روک لگانے سے کتنی ہوگی بچت؟
بلومبرگ کی رپورٹ کے مطابق کم از کم تین ماہ تک سرمایہ کاری پر روک لگا کر گروپ 3 ارب ڈالر تک کی بچت کر سکتا ہے۔ اس بچت سے قرض کی ادائیگی میں مدد مل سکتی ہے یا نقد رقم بڑھانے میں بھی مدد مل سکتی ہے جس سے گروپ کو بعد میں فائدہ ہو سکتا ہے۔ لوگوں نے کہا کہ گروپ کے منصوبوں کا ابھی جائزہ لیا جا رہا ہے اور اگلے چند ہفتوں میں اس کو حتمی شکل دے دی جائے گی۔ اڈانی گروپ کے نمائندے نے فوری طور پر ایک ای میل کا جواب نہیں دیا جس میں ریونیو اہداف کو کم کرنے اور کیپیکس میں تاخیر کے منصوبوں پر تبصرہ طلب کیا گیا تھا۔
کن کمپنیوں نے رکھے ہیں حصص گروی؟
اطلاعات کے مطابق، اڈانی گروپ کی تین کمپنیوں نے اپنے زائد شیئرز بینکوں کے پاس گروی رکھے ہیں۔ ان بینکوں نے اڈانی گروپ کی فلیگ شپ کمپنی اڈانی انٹرپرائزز کو قرض دیا ہوا ہے۔ ان کمپنیوں نے اپنے حصص ایس بی آئی کیپ ٹرسٹی کمپنی کے پاس گروی رکھے ہیں۔ جن کمپنیوں نے اپنے حصص گروی رکھے ہیں ان میں اڈانی پورٹس اور اسپیشل اکنامک زون، اڈانی ٹرانسمیشن لمیٹڈ اور اڈانی گرین انرجی لمیٹڈ شامل ہیں۔

Related posts

کعبہ کے بغیر دُنیا رُک جائے گی، نئی تحقیق میں خلاصہ

www.samajnews.in

سہارا انڈیا پریوار کے سربراہ سبرت رائے کا انتقال

www.samajnews.in

اے ایم یو اولڈ بوائز ایسوسی ایشن نے شاعر سہیل اقبال کو اعزاز سے نوازا

www.samajnews.in