41.1 C
Delhi
مئی 29, 2024
Samaj News

روزانہ 2 سے 3 پاپے چائے کیساتھ کھا رہے ہیں تو فوراً کردیں بند، نہیں تو…

نئی دہلی، سماج نیوز: شام کی چائے ہو یا صبح کا ناشتہ، بہت سے لوگ چائے کے ساتھ رسک (پاپا) کھانا پسند کرتے ہیں۔ دراصل رسک (پاپا) کھانے سے بھوک مٹ جاتی ہے اور اس کا کرکرا ذائقہ بھی کھانے میں اچھا لگتا ہے لیکن درحقیقت یہ رسک (پاپا) جو بھوک کو دباتا ہے صحت کو بھی نقصان پہنچاتا ہے۔ رسک (پاپا) کے کئی مضر اثرات دیکھنے کو ملے ہیں۔ خاص طور پر جب چائے کے ساتھ رسک کا مرکب ہو تو یہ صحت کے لیے بہت نقصان دہ ثابت ہو سکتا ہے۔ ان کا باقاعدہ استعمال صحت کے لیے نقصان دہ ثابت ہو سکتا ہے۔ رسک میں اضافی گلوٹین، ریفائنڈ آٹا اور چینی شامل ہوتی ہے، جو کہ صحت کے لیے اچھی نہیں سمجھی جاتیں، رسک بہت سے جسمانی مسائل کا سبب بن سکتا ہے، اس کی وجہ یہ ہے کہ رسک بنانے کے لیے اکثر استعمال ہونے والا ریفائنڈ تیل، میدہ، چینی گلوٹین کی کوالٹی اچھی نہیں ہوتی۔ اس قسم کے رسک کے استعمال سے بلڈ شوگر لیول بڑھ سکتا ہے اور ذیابیطس کا خطرہ بھی ہو سکتا ہے۔ رسک کو باقاعدگی سے کھانے سے یہ آپ کی آنت میں خراب بیکٹیریا کی افزائش کو بھی فروغ دیتا ہے، جو قوت مدافعت کو بھی کمزور کر سکتا ہے۔ اس کی وجہ سے ہاضمے کی خرابی کا خطرہ بھی رہتا ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ غذائی اجزاء کا جذب بھی ٹھیک سے نہیں ہوتا۔ بہت زیادہ رسک (پاپے) کھانے سے قبض ہو سکتی ہے۔ رسک (پاپا) کھانے سے کھانے کی خواہش بڑھ جاتی ہے جس کی وجہ سے وزن بڑھنے کا خدشہ رہتا ہے۔ چونکہ رس میں چینی اور ریفائنڈ میدہ زیادہ ہوتا ہے اس لیے یہ موٹاپے کی وجہ بھی بن سکتا ہے۔رسک میں کوئی غذائی اجزاء نہیں ہیں۔ یہ جسم میں سوزش کو بڑھاتا ہے۔ رسک کو ایسے آٹے سے بنایا جاتا ہے، جس میں نہ تو فائبر ہوتا ہے اور نہ ہی دیگر غذائی اجزاء۔ اس کے علاوہ اسے مزید پائیدار بنانے کے لیے اس میں کچھ کیمیکلز بھی ڈالے جاتے ہیں جو کہ صحت کے لیے نقصان دہ ہو سکتے ہیں۔

Related posts

مدرسہ رئیس العلوم پرسیا ، سدھارتھ نگر میں یوم آزادی کی تقریب کا انعقاد

www.samajnews.in

موجودہ وقت میں علم کی اہمیت زیادہ، مقابلہ آرائی کیلئے تعلیم لازمی: مفتی ناصر ایوبی

دارالعلوم مظفریہ میں ششما ہی امتحان مکمل:

www.samajnews.in

بابر اعظم نے عالمی کرکٹ کے اڑائے ہوش،بنایا عالمی ریکارڈ، وراٹ کو چھوڑا پیچھے

www.samajnews.in