45.1 C
Delhi
مئی 29, 2024
Samaj News

برازیل میں سپریم کورٹ، پارلیمنٹ اور صدارتی محل پر مشتعل مظاہرین کا حملہ

سابق صدر بولسونارو کے حامیوں نے ان کی انتخابی شکست تسلیم کرنے سے کیا انکار، کئی عمارتوں میں توڑ پھوڑ، فوج تعینات، 400فسادی گرفتار

برازیل: برازیل کے پارلیمنٹ، سپریم کورٹ اور صدارتی محل پر لوگوں نے دھاوا بول کر توڑ پھوڑ مچا دیا۔غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق برازیل میں سابق صدر بولسونارو کے حامیوں نے پارلیمنٹ، سپریم کورٹ اور صدارتی محل پر دھاوا بولا۔ سابق صدر بولسونارو کے حامیوں نے عمارتوں میں توڑ پھوڑ کی، شیشے اور فرنیچر کو توڑتے ہوئے چھتوں پر چڑھ گئے ۔سیکورٹی فورسز نے مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے شیلنگ کی، مظاہرین پر کریک ڈاؤن کیا گیا، جھڑپوں کی وجہ سے ایوانِ صدر سمیت متعدد سرکاری مقامات میدانِ جنگ بنے رہے ، سیکورٹی فورسز نے 400مظاہرین کو گرفتار کر لیا ہے ۔جدوجہد کے بعد فورسز نے پارلیمنٹ کا کنٹرول دوبارہ حاصل کر لیا، سابق صدر کے حامیوں نے موجودہ نئی حکومت کو تسلیم کرنے سے انکار کر دیا ہے اور وہ صدر داسلوا کے استعفیٰ کا مطالبہ کر رہے ہیں۔مظاہرین کا کہنا تھا کہ بولسونارو کو انتخابات میں دھاندلی کے ذریعے ہٹایا گیا۔دوسری طرف سیکریٹری جنرل اقوام متحدہ نے برازیل میں کانگریس کی عمارت پر حملے کی سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ جمہوری اداروں پر حملے ناقابل قبول ہیں۔ سیکورٹی فورسز نے مظاہرین کو منتشر کر دیا ہے اور پارلیمنٹ، سپریم کورٹ اور صدارتی محل کے ارد گرد کی صورتحال قابو میں ہے۔ جائر بولسونارو کے حامیوں کا یہ تشدد برازیل میں بغاوت کی طرف اشارہ کرتا ہے۔ کیونکہ بائیں بازو کے رہنما لوئیز اناسیو لولا ڈا سلوا برازیل میں صدر بن چکے ہیں اور نہ تو سابق صدر جیر بولسونارو اور نہ ہی ان کے حامی اسے قبول کرتے ہیں۔ لولا، جو جنوری 2003 سے دسمبر 2010 تک صدر رہے، نے 31 اکتوبر 2022 کو ہونے والے انتخابات میں بولسونارو کو شکست دی۔ ان کی حلف برداری کے ایک ہفتہ بعد ملک میں فسادات پھوٹ پڑے۔ یہی نہیں بولسونارو کے حامیوں نے سرکاری اسلحہ بھی چرایا ہے۔ اسی وقت، دارالحکومت میں تشدد کے پھیلنے کے بعد، بولسونارو نے اتوار کی رات دیر گئے ٹوئٹر پر کہا کہ پرامن مظاہرے جمہوریت کا حصہ ہیں۔ ایک بیان میں صدر لولا نے اس کارروائی کو بنیاد پرست فاشسٹ قرار دیا۔ اس سے قبل، لولا نے ہنگامی طاقت کا اعلان کیا تھا کہ نیشنل گارڈ کو دارالحکومت برازیلیا بھیج دیا جائے تاکہ نظم و نسق بحال ہو سکیں۔

Related posts

حسن اخلاق کتاب وسنت کی روشنی میں

www.samajnews.in

‘ماہواری کی ’شرم

www.samajnews.in

بزرگوں کے درس اور اصولوں کو بھلا دینے والی قوم ہی اکثر تباہی و پستی کا شکار بنتی ہے:مولانا محمد یعقوب بلند شہری

www.samajnews.in