33.1 C
Delhi
جولائی 25, 2024
Samaj News

’’دی کشمیر فائلز‘‘ پروپیگنڈہ ہے، لیپڈ کو جیوری کے تین دیگر ججوں کی ملی حمایت

نئی دہلی،سماج نیوز: اسرائیلی فلم ساز نادو لیپڈ جنہوں نے وویک اگنی ہوتری کی ہدایت کاری میں بننے والی ’’دی کشمیر فائلز‘‘ کو IFFI کی اختتامی تقریب میں ’’پروپیگنڈا فلم‘‘ اور ’’فحش‘‘ قرار دیا تھا اس کو IFFI کے تین دیگر ججوں کی حمایت ملی ہے۔ جیوری کے رکن جینکو گوتو نے ایک بیان ٹویٹ کیا، جس میں پاسکل شاونیس اور جیویر انگولو بارٹورن نے دستخط کیے ہیں۔ مذکورہ بیان میں کہا گیا ہے کہ پوری جیوری جانتی تھی اور لیپڈ نے جیوری کے سربراہ کے طور پر جو کہا تھا اس سے اتفاق کیا تھا۔ تاہم بیان میں IFFI انٹرنیشنل کمپیٹیشن جیوری کے واحد ہندوستانی فلم ساز سدیپٹو سین کا نام نہیں لیا گیا، جنہوں نے یہ دعویٰ کرتے ہوئے بیان دیا کہ لیپڈ نے ’’اپنی ذاتی حیثیت میں‘‘ تبصرے کیے ہیں۔ تاہم لیپڈ نے اپنے بیان پر تنازع شروع ہونے کے بعد معافی مانگ لی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان کا مطلب کشمیری پنڈتوں کے المیے کی نفی کرنا نہیں تھا، بلکہ صرف فلم کے ’سنیما کی ہیرا پھیری‘ پر تبصرہ کیا تھا۔ یہ سانحہ ’’ایک سنجیدہ فلم کا مستحق ہے‘‘۔ اس بات کی نشاندہی تینوں ساتھی ججوں نے اپنے مشترکہ بیان میں کی۔ بیان میں لکھا گیا’’فیسٹیول کی اختتامی تقریب میں جیوری کے صدر نادو نادو لیپڈ نے جیوری کے اراکین کی جانب سے ایک بیان دیا: ‘ہم سب 15ویں فلم ’دی کشمیر فائلز‘ سے پریشان اور صدمے میں ہیں، جس نے ہمیں ایک فحش پروپیگنڈہ قرار دیا۔ یہ فلم ایسے باوقار فلمی میلے کے فنکارانہ طور پر مسابقتی حصے کے لیے نامناسب ہے۔ ہم ان کے بیان پر قائم ہیں۔بیان میں مزید کہا گیا اور واضح کرنے کے لیے، ہم فلم کے مواد پر کوئی سیاسی موقف نہیں لے رہے تھے، ہم ایک فنکارانہ بیان دے رہے تھے۔ اس سے ہمیں فیسٹیول کے پلیٹ فارم کو سیاسی اور اس کے بعد نداو پر ذاتی حملوں کے لیے استعمال کرنے کی اجازت ملتی ہے۔ استعمال کرنے کے لئے بہت افسوسناک ہے۔ یہ جیوری کا کبھی بھی ارادہ نہیں تھا‘‘۔ہم آپ کو بتاتے ہیں کہ Jinko Gotoh آسکر کے لیے نامزد امریکی پروڈیوسر ہیں۔ Xavier A.Barturon فرانس سے ایک دستاویزی فلم ساز اور صحافی اور Pascal Chavans فرانس سے فلم ایڈیٹر ہیں۔

Related posts

فیفا ورلڈ کپ: مراکش کی جیت نے سب کو رُلا دیا

www.samajnews.in

کیرالہ میں دو خواتین کا بلی دیکر قتل

www.samajnews.in

متحدہ عرب امارات میں ایک لاکھ ملازمتوں کے مواقع

www.samajnews.in