33.1 C
Delhi
جولائی 25, 2024
Samaj News

کانگریس ورکنگ کمیٹی ختم، اسٹیرنگ کمیٹی کا قیام

نومنتخب صدر ملکارجن کھڑگے نے چارج سنبھالتے ہی لیا اہم فیصلہ

نئی دہلی،سماج نیوز: کانگریس کے نو منتخب صدر ملکا رجن کھڑگے نے آج بدھ کو کانگریس کا چارج سنبھال لیا ہے ،لیکن انہوںنے عہدہ سنبھالتے ہی ایک اہم فیصلہ بھی لیا ہے ۔انہوں نے سی ڈبلو سی کو تحلیل کر دیا ہے جبکہ اس کی جگہ ایک اسٹیرنگ کمیٹی بنادی ہے جو 47ممبران پر مشتمل ہے اس کمیٹی میں سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ ،سونیا گاندھی ،راہل گاندھی اور پرینکا گاندھی کو شامل کیا گیا ہے ۔ کہا جاتا ہے کہ کھڑگے کی صدارت میں بنائی گئی یہ کمیٹی اس وقت تک کانگریس ورکنگ کمیٹی کی جگہ لے گی ،جب تک آئندہ اجلاس میں کھڑگے کے انتخاب کی تصدیق کے بعد ایک نئی سی ڈبلیو سی نہیں بن جاتی۔یہاں یہ بات قابل غور ہے کہ اس کمیٹی میں سابقہ سی ڈبلیو سی کے زیادہ تر ارکان کو برقرار رکھا گیا ہے، لیکن پارٹی کے سینئر رکن پارلیمنٹ ششی تھرور کو اس میں جگہ نہیں دی گئی ہے۔ کمیٹی کے قیام پر وینوگوپال کا کہنا ہے کہ’’انڈین نیشنل کانگریس کے آئین کے آرٹیکل 15 (b) کے مطابق کانگریس صدر نے ایک اسٹیئرنگ کمیٹی تشکیل دی ہے، جو کانگریس ورکنگ کمیٹی کی جگہ کام کرے گی۔غور طلب ہے کہ سی ڈبلیو سی کانگریس کا اعلیٰ ترین فیصلہ ساز ادارہ ہے ۔جبکہ اسٹیئرنگ کمیٹی اب کھڑگے کے انتخاب کی تصدیق تک پارٹی کے مکمل اجلاس میں تمام فیصلے لے گی، جس میں پردیش کانگریس کمیٹی کے تمام نمائندے شامل ہوں گے ۔اس اجلاس کے اگلے سال مارچ میں منعقد ہونے کا امکان ہے۔یہاں قابل ذکر ہے کہ کانگریس کے فیصلے لینے والی کمیٹی سی ڈبلیو سی میں 23 اراکین تھے، لیکن کانگریس اسٹیئرنگ کمیٹی 47 اراکین پر مشتمل ہے۔قابل ذکر ہے کہ کھڑگے کے کانگریس صدر عہدہ سنبھالنے کے فوراً بعد روایت کے مطابق سبھی سی ڈبلیو سی اراکین نے اپنا استعفیٰ انھیں سونپ دیا۔ اس سلسلے میں کانگریس جنرل سکریٹری کے سی وینوگوپال نے کہا کہ ’’سبھی سی ڈبلیو سی اراکین، اے آئی سی سی جنرل سکریٹریز اور انچارج نے کانگریس صدر کو اپنا استعفیٰ سونپ دیا ہے۔‘‘ بعد ازاں سی ڈبلیو سی کی جگہ اسٹیئرنگ کمیٹی بنائے جانے کا اعلان کیا گیا۔کانگریس اسٹیئرنگ کمیٹی میں شامل سبھی اراکین کے نام اس طرح ہیں: سونیا گاندھی، منموہن سنگھ، راہل گاندھی، اے کے انٹونی، ڈاکٹر ابھشیک منو سنگھوی، اجے ماکن، امبیکا سونی، آنند شرما، اویناش پانڈے، گائی کھنگم، ہریش راوت، جئے رام رمیش، جتیندر سنگھ، کماری شیلجا، کے سی وینوگوپال، لالتھناولا، مکل واسنک، اومن چانڈی، پرینکا گاندھی وڈرا، پی چدمبرم، رندیپ سنگھ سرجیوالا، رگھوبیر مینا، طارق انور، اے چیلا کمار، ڈاکٹر اجئے کمار، ادھیر رنجن چودھری، بھکت چرن داس، دیویندر یادو، دگوجے سنگھ، دنیش گنڈو راؤ، ہریش چودھری، ایچ کے پاٹل، جئے پرکاش اگروال، کے ایچ منیپا، بی منکم ٹیگور، منیش چرتھ، میرا کمار، پی ایل پونیا، پون کمار بنسل، پرمود تیواری، رجنی پاٹل، رگھو شرما، راجیو شکلا، سلمان خورشید، شکتی سنگھ گوہل، ٹی سبیرامی ریڈی، طارق حامد کرا۔

Related posts

حرمین شریفین میں فوٹو گرافی کیلئے 3 باتوں کا رکھیں خیال: سعودی عرب

www.samajnews.in

مرکز تعلیم القرآن والسنہ کے زیر اہتمام ’عظیم دینی وعلمی اجلاس‘ منعقد

www.samajnews.in

معہد الفرقان لتحفیظ القرآن الکریم کے سنگ بنیاد کے موقع پر تاریخی اجلاس عام اختتام پذیر

www.samajnews.in