33.1 C
Delhi
جولائی 25, 2024
Samaj News

تعلیمی میدان کے ہیرو ہیں ڈاکٹر عبدالقدیر

دوہزار سے زائد طلباء کو بنا دیاایم بی بی ایس ڈاکٹر،’شاہین گروپ آف انسٹی ٹیوشنز‘ کے بانی ہیں ڈاکٹر عبدالقدیر:

’شاہین گروپ آف انسٹی ٹیوشنز‘ کے بانی ڈاکٹر عبدالقدیر کی محنت کو سلام

آج ہم آپ کو ملک کی ایک ایسی مشہور شخصیت سے ملوانے جارہے ہیں، جن کی محنت اور جذبے کی داستانیں لوگ اکثر سنتے رہتے ہیں۔ اور وہ ’شاہین گروپ آف انسٹی ٹیوشنز‘ کے بانی ڈاکٹر عبدالقدیر ہیں۔ ڈاکٹر عبدالقدیر کا نام ملک میں تربیت کے آئیکون کے طور پر لیا جاتا ہے اور ان کی تربیت کا نام ’شاہین گروپ آف انسٹی ٹیوشنز‘ دنیا بھر میں بہترین تعلیم اور کوچنگ کے حوالے سے جانا جاتا ہے۔ ڈاکٹر عبدالقدیر انجینئر ہیں لیکن انہوں نے ملک میں تربیت کے ساتھ ساتھ ایک عظیم انسان بنانے کے مقصد کے لیے کام کرنے کا فیصلہ کیا اور 1989 میں ایک چھوٹے سے کمرے میں 17 طلباء کے ساتھ کوچنگ انسٹی ٹیوٹ کا آغاز کیا، آج 16 پری یونیورسٹی کالجز اور 9 ہیں۔ اس انسٹی ٹیوٹ کے تحت کالج چل رہے ہیں اور ساتھ ہی ایک ڈگری کالج بھی چلایا جا رہا ہے جس کی شاخیں بنگلور اور میسور میں ہیں۔ ’شاہین گروپ آف انسٹی ٹیوشنز‘ میں 50فیصد طلباء غیر مسلم ہیں، اور لڑکیوں کے لیے B.Sc اور BA کی تعلیم کا بھی الگ انتظام ہے، اور یہ ادارہ آٹوموبائل اور موبائل فری ہے۔ ڈاکٹر عبدالقدیر نے کہا کہ آج کل لوگ اپنے لیے بڑے بڑے گھر بنا رہے ہیں، اور اس تعمیر پر بے دریغ خرچ کر رہے ہیں، لیکن لوگوں کو اپنی نسل کی تعمیر کی ذرا بھی فکر نہیں، جب کہ نسل کے گھر بنانا اس سے زیادہ ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر آپ کسی بچے؍لڑکی کو تعلیم دیتے ہیں تو سمجھ لیں کہ آپ نے ایک نسل کو تعلیم دی ہے۔ شاہین گروپ آف انسٹی ٹیوٹ کے تحت کے جی سے گریجویشن تک تعلیم کے ساتھ پروفیشنل کورسز کی کوچنگ بھی فراہم کی جاتی ہے۔ 2012 میں اس ادارے کے 71 طلباء، 2014 میں 89، 2015 میں 93، 2015 میں 111، 2016 میں 158 اور 2017 میں 2000 سے زائد طلباء نے مقابلہ جاتی امتحانات میں کامیابی حاصل کی۔ 2008 سے اب تک اس ادارے کے 1764 طلباء مسابقتی امتحانات میں کامیابی کے بعد میڈیکل، انجینئرنگ اور دیگر پروفیشنل گورنمنٹ کورسز میں داخلہ لے چکے ہیں۔ شاہین انسٹی ٹیوٹ کے 900 طلباء نے ایم بی بی ایس میں کامیابی حاصل کرکے ریکارڈ قائم کردیا۔ ڈاکٹر عبدالقدیر کا کہنا ہے کہ ہمارے لیے ہر بچہ قیمتی ہے، کوئی بچہ یا بچہ تعلیم سے محروم نہیں رہنا چاہیے، وہ ہر طبقے کو تعلیم دینے کے لیے ہمہ وقت تیار ہیں، اس کے لیے انھوں نے اسکالرشپ پروگرام چلائے ہیں۔ شاہین انسٹی ٹیوٹ نہ صرف پروفیشنل کورسز کے لیے کوچنگ فراہم کرتا ہے بلکہ انہیں ایک شریف انسان اور مہذب شہری بنانے پر بھی زور دیتا ہے، اسکولوں میں تعلیم کے ساتھ فرمانبردار بچوں کو، سب سے اہم بات یہ ہے کہ ڈاکٹر عبدالقدیر نے بتایا کہ آج ان کے انسٹی ٹیوٹ میں بی جے پی کے کئی بڑے لیڈروں کے بچے ہیں۔ ، سنگھ سے وابستہ عہدیدار پڑھتے ہیں اور کوچنگ لیتے ہیں اور خاص بات یہ ہے کہ ان بچوں کے اخلاق میں بہتری پر وہ خود آکر ڈاکٹر صاحب کا شکریہ ادا کرتے ہیں۔ آج 25 ریاستوں کے بچے ان کے ادارے میں میڈیکل کوچنگ کے لیے داخلہ لینے آتے ہیں اور بیرون ملک سے لوگ بھی اپنے بچوں کو پڑھائی اور میڈیکل اور انجینئرنگ کی کوچنگ کے لیے بھیجتے ہیں۔ ہر سال 200 سے زیادہ میڈیکل طلباء کامیاب ہوتے ہیں اور سرکاری کالجوں میں نشستیں حاصل کرتے ہیں، اب ڈاکٹر عبدالقدیر صاحب نے شاہین گروپ آف انسٹی ٹیوٹ کو وسعت دی ہے، اور شیموگہ، بیلگاوی، میسور، گلبرگہ، کولار، رائچور، پٹنہ، اورنگ آباد اور اس کا احاطہ کیا ہے۔ اس کی شاخیں لکھنؤ میں ہیں، اور کہا جاتا ہے کہ یہ جلد ہی جے پور (راجستھان) میں شروع ہو جائے گی۔ڈاکٹر عبدالقدیر نے اپنے ’شاہین گروپ آف انسٹی ٹیوشنز‘ میں ‘حفظ القرآن کے مختلف تین یا چار قسم کے کورسز بھی شروع کیے ہیں، اس کے علاوہ وہ B A Bsc، اور تمام حافظوں کو پیشہ ورانہ تربیت بھی فراہم کرتے ہیں۔ ملک میں کورسز بھی شروع کر دیے گئے ہیں، ساتھ ہی کورسز مکمل کرنے کے بعد ان کی تقرری میں بھی بھرپور مدد کی جاتی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اپریل 2018 میں راجستھان کے تمام حفاظ (جن کی عمر 17 سال یا اس سے کم ہے) کے لیے جے پور (راجستھان) میں ایک بڑا پروگرام منعقد کیا جائے گا۔ ڈاکٹر عبدالقدیر صاحب کو تعلیم اور بے لوث سماجی خدمت کے لیے باوقار ‘گروکل ایوارڈ، ٹیچنگ رتن کا حوالہ، اور ‘ڈاکٹر۔ ’ملتاز خان ایوارڈ‘ کے ساتھ ساتھ کرناٹک اردو اکادمی کی جانب سے بھی ایوارڈز دیے گئے ہیں۔ ڈاکٹر عبدالقدیر اور ان کی روح کے لیے ڈاکٹر علامہ اقبال کا ایک شعر یہ ہے:-
تم شاہین ہو، پرویز تمہارا کام ہے
تمہارے سامنے اور بھی آسمان ہیں

Related posts

کیا ایران میں بدلے گا ’حجاب قانون‘؟

www.samajnews.in

جسٹس ڈی وائی چندرچوڑ ہوں گے اگلے چیف جسٹس آف انڈیا

www.samajnews.in

یونانی دوائیوں کی بہتر جانکاری دینا میلے کا مقصد تھا: حکیم امام الدین ذکائی

www.samajnews.in