33.1 C
Delhi
جولائی 24, 2024
Samaj News

نیپال میں طیارہ حادثہ، 68افراد کی موت

نئی دہلی، سماج نیوز: نیپال کے دارالحکومت کاٹھمنڈو سے پوکھارا جانے والا طیارہ گر کر تباہ ہوگیا۔ اس حادثے میں 68 لوگوں کی موت ہو گئی ہے۔ حادثے کا شکار ہونے والے طیارے میں 68 مسافر اور عملے کے چار ارکان سوار تھے۔ جڑواں انجن والا اے ٹی آر 72 طیارہ یتی ایئر لائنز چلا رہا تھا۔ اسی وقت طیارے میں 5 ہندوستانیوں سمیت 15 ہندوستانی بھی سوار تھے۔ نیپال میں اس طرح کا طیارہ حادثہ پہلی بار نہیں ہوا ہے۔ ماضی میں بھی ایسے معاملے منظر عام پر آتے رہے ہیں۔ نیپال کے طیارے کے حادثے میں 68 افراد کی ہلاکت کی تصدیق ہو گئی ہے۔ حادثے کا شکار ہونے والے طیارے میں 6 بچوں سمیت 15 غیر ملکی شہری بھی سوار تھے۔ ایئر لائنز نے ایک بیان میں کہا کہ طیارے میں 53 نیپالی، 5 ہندوستانی، 4 روسی، 2 کورین اور 1 ایک ارجنٹائن، آئرلینڈ، آسٹریلیا اور فرانس سے تھا۔ ملبے میں بڑے پیمانے پر آگ لگنے سے ریسکیو آپریشن مشکل ہو رہا ہے۔ نیپال کے وزیر اعظم پشپا کمل دہل ‘پرچنڈ نے حادثے کے فوراً بعد کابینہ کا ہنگامی اجلاس طلب کیا۔ نیپال کی حکومت نے واقعے کی تحقیقات کے لیے پانچ رکنی انکوائری کمیشن تشکیل دی ہے۔ نیپال کی سول ایوی ایشن اتھارٹی کے مطابق طیارے نے کاٹھمنڈو کے تریبھون بین الاقوامی ہوائی اڈے سے صبح 10.33بجے ٹیک آف کیا۔طیارہ پوکھرا ہوائی اڈے پر اترنے ہی والا تھا کہ دریائے سیٹی کے کنارے پر واقع ایک گھاٹ پر گر کر تباہ ہو گیا۔ حادثہ ٹیک آف کے تقریباً 20 منٹ بعد پیش آیا۔ ایئر لائن کے ترجمان سدرشن برٹولا نے کہا کہ ہمیں ابھی تک نہیں معلوم کہ کون کون بچ پایا ہے۔ نیپال کابینہ کے ہنگامی اجلاس میں طیارہ حادثے میں جاں بحق ہونے والوں پر ایک دن کا سوگ منانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اس کے لیے 16 جنوری کو عام تعطیل کا اعلان کیا گیا ہے۔ مرکزی شہری ہوا بازی کے وزیر جیوتی رادتیہ سندھیا نے طیارہ حادثے میں لوگوں کی موت پر تعزیت کا اظہار کیا ہے۔آپ کو بتا دیں کہ نیپال کی ایئر لائن کا کاروبار حفاظتی خدشات اور عملے کی ناکافی تربیت سے دوچار ہے۔ یوروپی یونین نے نیپال کو 2013 میں بین الاقوامی سول ایوی ایشن آرگنائزیشن کی طرف سے حفاظتی خدشات کے بعد فلائٹ سیفٹی بلیک لسٹ میں ڈال دیا۔ اس سے قبل نیپال میں ہوائی جہاز کے خوفناک حادثات میں سینکڑوں افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔ ان میں سے مئی 2022 میں ہوائی جہاز کے حادثے میں 22 افراد ہلاک ہوئے تھے۔ اور مارچ 2018 میں کاٹھمنڈو ہوائی اڈے کے قریب ایک طیارہ گر کر تباہ ہوا، جس میں 51 افراد ہلاک ہوئے۔ اس سے قبل 1992 میں پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائنز کی پرواز میں سوار تمام 167 افراد کاٹھمنڈوجاتے ہوئے ہلاک ہو گئے تھے۔ اسی دوران تقریباً دو ماہ قبل تھائی ایئر ویز کا ایک طیارہ گر کر تباہ ہو گیا تھا جس میں 113 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

Related posts

چناوی ریوڑیوں پر سپریم کورٹ سخت

www.samajnews.in

امریکہ: وسط مدتی انتخابات میں 82 مسلم نژاد امیدوار کامیاب

www.samajnews.in

صفہ ماڈل اسکول ششہنیاں کے زیر اہتمام پہلا دعوتی وتاریخی اجلاس عام بحسن وخوبی اختتام پذیر

www.samajnews.in