45.1 C
Delhi
مئی 29, 2024
Samaj News

سری لنکا نے انڈیا کو ہرایا، سیریز1-1 سے برابر

پونے: سری لنکا اور بھارت کے مابین ٹی -20کا تین میچوں کے سیریز کا دوسرا میچ پونے میں کھیلا گیا جہاں پہلے بازی کرتے ہوئے سری لنکا نے 207رنز کا مشکل ترین ہدف دیا۔ اس کا پیچھا کرتے ہوئے ٹیم انڈیا کی ٹیم صرف 190رنز ہی بنا سکی،اور دوسرے ونڈے میں اسے شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ تین میچوں کی سیریز اب 1-1سے برابر ہوگئی۔ اب آخری اور تیسرے میچ میں جو ٹیم جیتے گی اسی کا ٹرافی پر قبضہ ہوگا۔ ٹیم انڈیا کے اکشر پٹیل (65) اور سوریہ کمار یادو (51) کی جارحانہ نصف سنچریوں کے باوجود سری لنکا نے جمعرات کو دوسرے ٹی ٹوئنٹی میں بھارت کو 16 رن سے شکست دے کر سیریز 1-1 سے برابر کر دی۔ اس دلچسپ میچ میں سری لنکا نے ہندوستان کے سامنے جیت کے لئے 207 رنز کا بڑا ہدف رکھا جس کے جواب میں ٹیم انڈیا صرف 190 رنز ہی بنا سکی۔کپتان داسن شناکا نے 22 گیندوں میں دو چوکوں اور چھ چھکوں کی مدد سے 56 رنز بنائے جبکہ سلامی بلے باز کوشل مینڈس نے 31 گیندوں میں تین چوکوں اور چار چھکوں کی مدد سے 52 رنز کی نصف سنچری بنا کر سری لنکا کو اس بڑے اسکور تک پہنچانے میں اہم رول ادا کیا ۔ چاریتا اسلانکا نے 19 گیندوں پر چار چھکوں کی مدد سے 37 رنز کی اہم شراکت کی۔ہدف کے تعاقب میں ہندوستانی ٹیم کے پانچ بلے باز صرف 64 رنز پر پویلین لوٹ گئے جس کے بعد اکشر اور سوریہ کمار نے میزبان ٹیم کو میچ میں واپسی دلائی ۔ دونوں نے چھٹی وکٹ کے لیے 40 گیندوں پر 91 رنز کی عمدہ شراکت کرکے ہندوستان کو میچ میں برقرار رکھا۔ سوریہ کمار کے آؤٹ ہونے کے بعد شیوم ماوی (15 گیندوں پر 26) نے بھی کچھ اچھے شاٹس کھیلے لیکن ہندوستان کو جیت سے ہمکنار نہ کرسکے۔اس جیت کے ساتھ سری لنکا نے تین میچوں کی سیریز 1-1 سے برابر کر دی ہے اور سیریز کا فیصلہ کن میچ راجکوٹ میں ہفتہ کو کھیلا جائے گا۔ہدف کا تعاقب کرتے ہوئے ہندوستانی ٹیم کی شروعات خراب رہی اور جارحانہ شاٹس کھیلنے کی کوشش میں وہ وکٹیں گنواتی رہیں۔ ایشان کشن، شبمن گل اور راہل ترپاٹھی ڈبل فیگرز کو بھی نہ چھو سکے جبکہ ہاردک پانڈیا نے 12 رنز بنائے۔ہندوستان کے 4 وکٹ صرف 34 رن پر گرنے کے بعد دیپک ہڈا نے سوریہ کمار کے ساتھ شراکت داری شروع کی لیکن وانیندو ہسرنگا نے 10 ویں اوور میں ہڈا کو آوٹ کرکے میزبان ٹیم کی مشکلات میں اضافہ کردیا۔ہندوستان کی آدھی ٹیم پویلین لوٹ چکی تھی اور ٹیم نے 10 اوورز میں صرف 64 رنز بنائے۔ آخری 10 اوورز میں 143 رنز حاصل کرنا ناممکن نظر آرہا تھا لیکن اکشر اور سوریہ کمار کی شراکت نے ہندوستان کی امیدیں پھر سے جگا دیں۔اکشر-سوریا کمار نے چھٹی وکٹ کے لیے صرف 40 گیندوں میں 91 رنز جوڑے۔ اکشر نے 14ویں اوور میں ہسرنگا کو تین چھکے لگا کر 26 رنز جوڑے۔ ٹی 20 انٹرنیشنل میں یہ ہسرنگا کا سب سے مہنگا اوور تھا۔اس شراکت سے ہندوستان نے مقابلے میں واپسی کی لیکن دلشان مدوشنکا نے سوریہ کمار کو آؤٹ کر کے میچ کا رخ پھر سے موڑ دیا۔ سوریہ کمار نے 36 گیندوں میں تین چوکوں اور تین چھکوں کی مدد سے 51 رنز بنائے۔ٹیم انڈیا نے اپنے نائب کپتان کی وکٹ گنوانے کے بعد بھی ہمت نہیں ہاری ۔ آٹھویں نمبر پر بلے بازی کرنے آئے شیوم ماوی نے 15 گیندوں پر دو چوکوں اور دو چھکوں کی مدد سے 26 رنز بنائے۔ ہندوستان کو آخری اوور میں 21 رنز درکار تھے لیکن ٹیم کی تمام امیدیں اس وقت ختم ہو گئیں جب اوور کی تیسری گیند پر اکشر پٹیل آوٹ ہوگئے۔اس سے قبل ،ٹاس ہارنے کے بعد بلے بازی کرتے ہوئے سری لنکا نے شاندار آغاز کیا۔ دوسرے اوور میں ارشدیپ سنگھ کی تین نو بالز سری لنکا کے لیے مددگار ثابت ہوئیں اور اس اوور میں انھوں نے 19 رنز جوڑے۔ مینڈس نے پھر اپنے بازو کھولے اور پتھم نسانکا کے ساتھ پہلی وکٹ کے لیے آٹھ اوورز میں 80 رنز بنائے۔ یوزویندر چہل نے نویں اوور میں مینڈس کو آؤٹ کر کے اس شراکت کو توڑا۔ مینڈس نے 31 گیندوں پر تین چوکوں اور چار چھکوں کی مدد سے 52 رنز بنائے، حالانکہ نسانکا 35 گیندوں پر صرف 33 رنز ہی بنا سکے۔اس شراکت داری کے نتیجے میں سری لنکا ایک بڑے اسکور کی راہ پر گامزن تھا لیکن عمران ملک نے اگلے ہی اوور میں بھانوکا راجا پاکسے کو آؤٹ کر دیا، جب کہ اکشر پٹیل نے نسانکا اور دھننجایا ڈی سلوا کی وکٹیں لے کر رفتار پر لگام لگائی۔ چریت اسلانکا (37) نے 16ویں اوور میں چہل کی گیند پر دو چھکے لگا کر اننگز کی رفتار بڑھانے کی کوشش کی لیکن عمران نے انہیں اگلے ہی اوور میں پویلین بھیج دیا۔ خطرناک نظر آنے والے اسلانکا کی وکٹ لے کر ہندوستان نے میچ پر قبضہ جما لیا، لیکن نو بال کرنا انہیں ایک بار پھر مہنگا پڑ گیا۔ارشدیپ کے 19ویں اوور میں شناکا سوریہ کمار یادیو کوکیچ دے بیٹھے لیکن سری لنکا کے کپتان گیند نو بال ہونے کی وجہ سے بچ گئے۔ اس وقت شاناکا 30 رنز پر تھے ۔ شاناکا نے صرف 22 گیندوں کی اپنی اننگز میں چھ چھکے اور دو چوکے لگائے اور 56 رن بنائے۔ سری لنکا نے ہندوستان کی کمزور گیندبازی کا فائدہ اٹھایا اور آخری پانچ اوورز میں 77 رنز جوڑ کر چھ وکٹ پر 206 رن بنائے ۔عمران نے چار اوورز میں 48 رن دے کر تین وکٹ لئے جبکہ اکشر نے چار اوور میں صرف 24 رن دے کر دو وکٹ لئے۔ چاہل نے چار اوورز میں 30 رن دے کر ایک وکٹ حاصل کی۔ شیوم ماوی نے چار اوور میں 53 رن دیئے جبکہ ارشدیپ نے دو اوور میں 37 رن دیئے اور دونوں کو کوئی کامیابی نہیں ملی۔ ہندوستان نے اس میچ میں 12 اضافی رنز دیے جن میں سے سات نو بال شامل ہیں۔سری لنکا نے چھ سال بعد ہندوستان کو اسکی سرزمین پر شکست دی ہے۔ اس سے قبل 2016 میں پونے کے اسی گراؤنڈ میں میزبان ٹیم کو شکست دی تھی۔

Related posts

اپنا ہی دائر مقدمہ اویسی کے گلے کا پھانس بن گیا

www.samajnews.in

کیا خود انحصاری ملکی دفاع کو خطرے میں دھکیل رہی ہے؟

www.samajnews.in

سوئٹزر لینڈ میں حجاب پر پابندی کی تیاری

www.samajnews.in