41.1 C
Delhi
مئی 29, 2024
Samaj News

امریکی ڈرون کو روس نے مار گرایا، دونوں ممالک میں مزید بڑھ سکتی ہے کشیدگی

واشنگٹن، سماج نیوز: یوکرین اور روس کی جنگ کے درمیان بحیرہ اسود میں روسی طیارے کے امریکی ڈرون سے ٹکرانے کے واقعے نے ایک نئے تنازع کو جنم دیا ہے۔ اس واقعے پر امریکی فوج کا کہنا تھا کہ ایک روسی لڑاکا طیارے نے بحیرہ اسود کے اوپر ایک امریکی ڈرون میں ایندھن بھرا اور پھر اس سے ٹکرا گیا، جس سے ڈرون گر کر تباہ ہوگیا۔اس واقعے کے بعد امریکے اور روس میں کشیدگی بڑھ سکتی ہے۔ امریکہ کا کہنا ہے کہ روسی فضائیہ کا رویہ انتہائی غیر ذمہ دارانہ اور اشتعال انگیز ہے۔ اسے پروفیشنل ورک آؤٹ بھی نہیں کہا جا سکتا۔ ہم معاملے کی تحقیقات کر رہے ہیں۔کچھ میڈیا رپورٹس میں کہا گیا ہے کہ روسی سخوئی 25 طیارے نے امریکی ڈرون کو مار گرایا ہے۔ امریکہ کا کہنا تھا کہ معلوم کیا جائے گا کہ یہ حادثہ تھا یا ہمارا ڈرون جان بوجھ کر مار گرایا گیا۔روس کی وزارت دفاع نے کہا ہے کہ اس کا لڑاکا طیارہ امریکی ڈرون سے نہیں ٹکرایا بلکہ ڈرون پہلے ہی بحیرہ اسود میں گر چکا تھا۔ اب تحقیقات کے بعد ہی صورتحال واضح ہوگی۔بتایا جا رہا ہے کہ یہ واقعہ اس وقت پیش آیا جب امریکی ڈرون اور روس کے دو لڑاکا طیارے SU-27 بحیرہ اسود کے اوپر بین الاقوامی پانیوں میں گشت کر رہے تھے۔امریکہ کا کہنا ہے کہ ڈرون اس وقت بین الاقوامی فضائی حدود میں معمول کے مشن پر تھا جب دو روسی طیاروں نے اسے روکنے کی کوشش کی۔روس نے کہا کہ ڈرون تیزی سے چلتے ہوئے گر کر تباہ ہوا اور اس بات سے انکار کیا کہ دونوں طیاروں نے اسے چھوا تھا۔ روسی وزارت دفاع نے مزید کہا کہ ایم کیو-9 ریپر ڈرون اپنے ٹرانسپونڈرز کو بند کر کے اڑ رہا تھا۔ ٹرانسپونڈر مواصلاتی آلات ہیں جو ہوائی جہاز کو ٹریک کرنے کی اجازت دیتے ہیں۔ ریپر ڈرون پروں کا پھیلاؤ 20m (66 فٹ) ہوتا ہے اور اسے نگرانی کرنے والے طیارے کے طور پر استعمال کیا جاتا ہے۔ادھر، پنٹاگون سے جاری بیان میں کہا گیا ’’دو روسی ایس یو-27 طیاروں نے امریکی فضائیہ کے انٹیلی جنس، نگرانی اور جاسوسی میں استعمال ہونے والے بغیر پائلٹ کے ایم کیو-9 طیارے کی پرواز میں غیر محفوظ اور غیر پیشہ ورانہ مداخلت کی، جو بحیرہ اسود کے اوپر بین الاقوامی فضائی حدود میں کام کر رہا تھا۔‘‘بیان میں مزید کہا گیا ’’امریکی ڈرون کو ٹکر مارنے سے قبل روسی لڑاکا طیارے ایس یو-27 نے لاپرواہی اور غیر پیشہ ورانہ انداز میں پرواز کی اور ڈرون پر کئی مرتبہ ایندھن ڈالا تاکہ اس کے کیمرے کام کرنا بند کر دیں۔‘‘ بیان میں کہا گیا کہ یہ واقعہ غیر محفوظ اور غیر پیشہ ورانہ ہونے کے علاوہ روسی طیاروں کی اہلیت کی کمی کو بھی ظاہر کرتا ہے۔

Related posts

ملائم سنگھ یادو کی حالت انتہائی تشویشناک

www.samajnews.in

’بھارت جوڑو یاترا‘ کو بدنام کرنے کی سازش کررہی ہے بی جے پی:کانگریس

www.samajnews.in

ڈنمارک میں پھر جلایا گیا قرآن

www.samajnews.in