33.1 C
Delhi
جولائی 25, 2024
Samaj News

حجاب پہن کر نہیں دے سکتیں امتحان، کرناٹک حکومت کا متنازع فیصلہ

بنگلورو: کرناٹک کے تعلیمی اداروں میں مسلم طالبات پر حجاب کی پابندی کو لے کر تنازعہ تھمنے کا نام نہیں لے رہا ہے۔ اب کرناٹک کے وزیر تعلیم بی سی ناگیش نے بورڈ امتحانات کے درمیان ایک ایسا بیان دیا ہے جس نے حجاب پہننے والی طالبات کی ان امیدوں پر پانی پھیر دیا ہے جس میں وہ سمجھ رہی تھیں کہ امتحان کے دوران وہ حجاب پہن سکیں گی۔ وزیر تعلیم نے اس تعلق سے واضح الفاظ میں کہا کہ ’’ریاستی بورڈ امتحانات میں حجاب پہننے پر پابندی برقرار رہے گی۔‘‘بی سی ناگیش کا کہنا ہے کہ حکومت اصولوں سے سمجھوتہ نہیں کرنے والی ہے۔ بورڈ امتحانات میں شامل ہونے والی طالبات کو امتحان مراکز کے احاطہ تک حجاب پہن کر جانے کی اجازت ہے، لیکن امتحان کے کمرے میں انھیں حجاب کو اتارنا ہوگا۔قابل ذکر ہے کہ اسکولی تعلیم اور خواندگی محکمہ نے آئندہ 9 مارچ سے شروع ہونے والی پی یو یعنی پری یونیورسٹی کے دوسرے سال کے سالانہ امتحان میں شامل ہونے کی مسلم طالبات کی گزارش کو یہ کہتے ہوئے خارج کر دیا کہ گریجویٹ کالجوں کی پرنسپلز اور دیگر کو حجاب پہننے کی اجازت نہیں ہے۔ اس معاملے میں وزیر برائے اسکولی تعلیم بی سی ناگیش کا کہنا ہے کہ چونکہ حجاب معاملہ سپریم کورٹ میں زیر غور ہے اس لیے سالانہ امتحان کے دوران حجاب کی اجازت دینے کا سوال ہی نہیں اٹھتا۔ اس وجہ سے ہم اس بات کو سنجیدگی سے نہیں لیتے کہ کون سی طالبہ حجاب نہیں پہننے سے امتحان میں فیل ہو جاتی ہے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق محکمہ جاتی ذرائع نے بتایا کہ اڈپی، چکابلاپور، چامراج نگر اور بنگلورو دیہی اضلاع میں گریجویٹ کالجوں کی کچھ مسلم طالبات نے متعلقہ کالجوں کے پرنسپلز سے حجاب پہن کر امتحان دینے کی اجازت دینے کے لیے عرضی داخل کی تھی۔ گزشتہ ہفتہ امتحان میں حجاب پہننے کی اجازت کے لیے دو گزارشات آئی تھیں اور ہم نے انھیں سرے سے خارج کر دیا۔ ساتھ ہی جنوبی کنڑ ضلع کے ایک کالج کے پرنسپل نے کہا کہ سبھی اسٹوڈنٹس امتحان کے اصولوں پر لازمی عمل کریں۔

Related posts

ایم ایل اے بننے کی دلچسپ کہانی

www.samajnews.in

فضائل یوم جمعہ- احادیث کی روشنی میں

www.samajnews.in

شاہی خرچ پر ملک نیپال سے 10اہم شخصیات عمرہ کیلئے مکہ روانہ

www.samajnews.in