41.1 C
Delhi
مئی 29, 2024
Samaj News

خواتین ٹی20-ورلڈ کپ: آسٹریلیاکی خطابی ہیٹرک، افریقہ کو 19رنز سے دی شکست

نئی دہلی، سماج نیوز: اوپنر بیتھ مونی کی نصف سنچری کے بعد گیند بازوں کی عمدہ کارکردگی کی بدولت آسٹریلیا نے اتوار کو کیپ ٹاؤن میں آئی سی سی خواتین کے ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کے فائنل میں 19 رنز سے جیت لیا۔ آسٹریلیا کے علاوہ کسی اور ٹیم نے یہ اعزاز ایک سے زیادہ مرتبہ نہیں جیتا ہے۔ وہ لگاتار سال 2010، 2012، 2014 اور پھر 2018، 2020، 2023 کے چیمپئن ہیں۔ آسٹریلیا نے مونی کی 53 گیندوں پر 74 ناٹ آؤٹ، 9چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 6وکٹیں حاصل کیںاور اس کی پہلی وکٹ میں ایلیسا ہیلی (18) کے ساتھ 36 اور دوسری میں ایشلے گارڈنر (29) کے ساتھ 46 رنز بنائے لیکن 156 رنز بنائے۔ جواب میں جنوبی افریقی ٹیم اوپنر لورا ولوارڈٹ (48 گیندوں میں 61 رنز، پانچ چوکوں، تین چھکوں) کی نصف سنچری کے باوجود چھ وکٹوں پر صرف 137 رنز ہی بنا سکی۔ وولوارڈٹ کے علاوہ، چلو ٹریون (25) واحد جنوبی افریقہ تھے جنہوں نے 20 رنز کا ہندسہ عبور کیا۔ دونوں نے چوتھی وکٹ کے لیے 55 رنز بھی جوڑے۔ایشلیگ (4 اوورز میں 1؍20)، میگن شٹ (4 اوورز میں 1؍23) اور ڈی آرسی براؤن (4 اوورز میں 1/25) آسٹریلیا کے لیے اقتصادی باؤلرز تھے، جو اپنا مسلسل ساتواں فائنل کھیل رہے تھے۔ ہر ایک نے ایک وکٹ حاصل کی۔ بولنگ کے دوران.ہدف کے تعاقب میں پہلی بار ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کا فائنل کھیلنے والی جنوبی افریقی ٹیم پانچویں اوور میں ہی تاجمین برٹس کی وکٹ گنوا بیٹھی جو 17 گیندوں پر 10 رنز بنانے کے بعد ٹاہلیا میک گرا کی گیند پر کیچ آؤٹ ہوگئیں۔ براؤن.پاور پلے میں میزبان ٹیم ایک وکٹ پر 22 رنز ہی بنا سکی۔ اس کے بعد وولوارٹ نے برتری حاصل کی اور براؤن کو چوکا اور جیس جوناسن کو چھکا لگایا۔تاہم مارجن کیپ نے ایشلی کی گیند پر شارٹ تھرڈ مین پر براؤن کو آسان کیچ دیا۔

انہوں نے 11 رنز بنائے۔وولوارڈٹ کے علاوہ، چلو ٹریون (25) واحد جنوبی افریقہ تھے جنہوں نے 20 رنز کا ہندسہ عبور کیا۔ دونوں نے چوتھی وکٹ کے لیے 55 رنز بھی جوڑے۔ایشلیگ (4 اوورز میں 1/20)، میگن شٹ (4 اوورز میں 1/23) اور ڈی آرسی براؤن (4 اوورز میں 1/25) آسٹریلیا کے لیے اقتصادی باؤلرز تھے، جو اپنا مسلسل ساتواں فائنل کھیل رہے تھے۔ ہر ایک نے ایک وکٹ حاصل کی۔ بولنگ کے دوران.ہدف کے تعاقب میں پہلی بار ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کا فائنل کھیلنے والی جنوبی افریقی ٹیم پانچویں اوور میں ہی تاجمین برٹس کی وکٹ گنوا بیٹھی جو 17 گیندوں پر 10 رنز بنانے کے بعد ٹاہلیا میک گرا کی گیند پر کیچ آؤٹ ہوگئیں۔ براؤن.پاور پلے میں میزبان ٹیم ایک وکٹ پر 22 رنز ہی بنا سکی۔ اس کے بعد وولوارٹ نے برتری حاصل کی اور براؤن کو چوکا اور جیس جوناسن کو چھکا لگایا۔تاہم مارجن کیپ نے ایشلی کی گیند پر شارٹ تھرڈ مین پر براؤن کو آسان کیچ دیا۔ انہوں نے 11 رنز بنائے۔ٹیم کو آخری دو اوورز میں 35 رنز درکار تھے۔ شٹ کے 19 ویں اوور میں آٹھ جبکہ ایشلے کے آخری اوور میں صرف سات رنز ملے، جس سے آسٹریلیا کی جیت یقینی ہو گئی۔اس سے قبل آسٹریلوی کپتان میگ لیننگ نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا۔ ایلیسا اور مونی کی جوڑی نے ٹیم کو محتاط آغاز فراہم کیا۔مونی نے آہستہ سے آغاز کیا لیکن الیسا تال میں لگ رہی تھی۔ انہوں نے نونکولیکو ملابا کی دوسری گیند پر چوکا لگا کر کھاتہ کھولا اور پھر اسماعیل اور کیپ پر بھی چوکے لگائے۔تاہم کیپ کی اچھلتی ہوئی گیند الیسا کوورس میں نادین ڈی کلرک کے ہاتھوں میں چلی گئی۔اس کے بعد مونی اور ایشلی نے اننگز کو آگے بڑھایا۔ ایشلے نے آٹھویں اوور میں ملابا پر لگاتار دو چوکے لگا کر ٹیم کے اسکور کو 50 رنز سے آگے لے گئے۔ انہوں نے ڈی کلرک کو بھی لگاتار دو چھکے لگائے لیکن چلو ٹریانون کی گیند پر سن لوس کے ہاتھوں کیچ ہو گئے۔ انہوں نے 21 گیندوں کا سامنا کرتے ہوئے دو چوکے اور دو چھکے لگائے۔موونی نے ایک سرے کو پکڑا اور درمیان میں کچھ دلکش شاٹس کھیلے۔ انہوں نے ڈی کلرک پر لگاتار دو چوکے لگائے۔گریس ہیرس (10) نے آسٹریلیا کی سنچری 14ویں اوور میں چار اوور ٹرائیون کے ساتھ مکمل کی لیکن اگلے ہی اوور میں ملابا کے ہاتھوں بولڈ ہو گئے۔آسٹریلیا کو آخری اوورز میں رن ریٹ بڑھانے میں مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ 11 گیندوں میں 10 رنز بنانے کے بعد لیننگ کیپ کی گیند پر ٹریون کے ہاتھوں کیچ ہو گئے۔مونی نے کیپ پر چوکے لگا کر 44 گیندوں میں اپنی نصف سنچری مکمل کی۔ آخری اوور میں انہوں نے اسماعیل کی لگاتار گیندوں پر چھکے اور چوکے لگائے۔ اسماعیل نے ایلس پیری (07) اور جارجیا ویرہم (00) کو لگاتار گیندوں پر آؤٹ کیا۔اسماعیل نے 26 جبکہ کیپ نے 35 رنز کے عوض دو وکٹیں حاصل کیں۔

Related posts

ہیرا گروپ کیخلاف پھیلائی گئی جھوٹی افواہ کی حقیقت

www.samajnews.in

سڑک پر پرندوں کی طرح اڑیں لڑکیاں

www.samajnews.in

روسی میزائل پولینڈ میں گرا، دو کی موت، الرٹ پر پولینڈ کی فوج

www.samajnews.in