40.1 C
Delhi
مئی 22, 2024
Samaj News

بی جے پی-آر ایس ایس کی پھیلائی گئی نفرت کو مٹانا ہمارا مقصد:راہل گاندھی

سرینگر،سماج نیوز: بھارت جوڑو یاترا ملک میں نفرت کے بیانے سے لڑنے میں کامیاب قراردیتے ہوئے راہل گاندھی نے کہا ہے کہ ہم اخوات اور مساوات میں یقین رکھتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس پارٹی ملک کے لوگوں کو مذہب کی بنیاد پر تقسیم کرنے میں یقین نہیں رکھتی ۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر سے لیکر کنیا کماری تک ہم مذہبی بھائی چارے کو فروغ دینے کی کوشش میں لگے ہیں اور اس معاملے میں کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔ راہل گاندھی کی قیادت میں کانگریس کی بھارت جوڑو یاترا اپنے آخری مرحلے میں ہے اور یاترا آج جموں و کشمیر کے نگروٹا سے ادھم پور کیلئے روانہ ہوئی۔ دریں اثنا، یاترا کی قیادت کر رہے راہل گاندھی نے پریس کانفرنس سے خطاب کیا۔ راہل گاندھی نے کہا کہ یاترا ان کیلئے تپسیا ہے اور جب وہ یاترا نکال رہے ہیں تو اس پر سیاست تو ہوگی ہی۔راہل گاندھی نے کہا ’ہم نے یہ یاترا کنیا کماری سے شروع کی تھی اور اب یہ یاترا جموں وکشمیر میں آ چکی ہے۔ اس یاترا کا مقصد ملک کو متحد کرنا اور نفرت کو ختم کرنا ہے۔ بی جے پی آر ایس ایس نے نفرت کا ماحول پھیلایا ہے اس کے خلاف کھڑے ہونے کا مقصد ہے‘۔ راہل گاندھی نے دہرایا کہ ملک کی دولت چنندہ لوگوں کے ہاتھ میں دے دی گئی ہے۔ جس کی وجہ سے مہنگائی اور بے روزگاری بڑھ رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ جب جموں و کشمیر کی بات آتی ہے تو یہاں مکمل ریاست کا مسئلہ ہے۔ ہماری کوشش ہے کہ جموں و کشمیر میں ایک بار پھر جمہوریت زندہ ہو۔ انہوں نے کہا کہ جموں و کشمیر کے لوگوں کا دکھ درد سمجھ میں آ رہا ہے۔ یہ بہت بہتر یاترا ہے۔ ہم چند دنوں میں سری نگر پہنچ جائیں گے۔ اس سوال پر کانگریس اس کے بعد بھی بھارت جوڑو یاترا جیسی مہم چلانے جا رہی ہے، راہل گاندھی نے کہا کہ آگے جو ہوگا وہ یاترا کے بعد ہوگا، پہلے یاترا ختم ہو جائے پھر ہم فیصلہ کریں گے، فی الحال ہماری توجہ یاترا پر ہے۔ جس کام کے لیے نکلے ہیں توجہ اسی پر مرکوز ہونی چاہئے۔ دفعہ 370 پر راہل گاندھی نے کہا کہ اس معاملے پر کانگریس کی سوچ بالکل واضح ہے۔بھارت جوڑو یاترا کے حوالے سے راجناتھ سنگھ کے حالیہ تبصرہ پر راہل گاندھی نے کہا کہ میں کسی سے نفرت نہیں کرتا۔ راہل گاندھی نے کہا کہ اگر آپ اس یاترا کو دیکھیں گے تو آپ کو پتہ چل جائے گا کہ یہ یاترا نفرت کی ہے یا محبت کی! اس ملک کے لوگوں نے اس یاترا میں محبت کے سوا کچھ نہیں دیکھا۔ راجناتھ کے بیان پر ردعمل دیتے ہوئے راہل گاندھی نے کہا ’ہندوستان کو جوڑنے والی یہ یاترا کسی کو کیسے نقصان پہنچا سکتی ہے، میں ان کی سوچ پر حیران ہوں‘۔راہل گاندھی نے کہا ’’کل میں نے کشمیری پنڈتوں کے ایک وفد سے ملاقات کی۔ انہوں نے اظہار خیال کیا کہ انہیں لگتا ہے کہ ان کی بے عزتی کی جا رہی ہے اور سیاسی فائدے کے لیے استعمال کیا جا رہا ہے۔ انہوں نے مجھ سے اپنے مسائل کو پارلیمنٹ میں اٹھانے کی درخواست کی‘۔ انہوں نے کہا ’گورنر نے ہماری توہین کی۔ ہمیں سری نگر واپس بھیجا جا رہا ہے، جہاں ہمارے لوگوں کو گولی ماری جا رہی ہے۔ اب وہ میرے پاس آئے اور میں ان کی بات نہ اٹھاؤں تو پھر ’بھارت جوڑو یاترا‘ کا کیا مطلب رہ جائے گا؟‘

Related posts

نفرت کے بازار میں محبت کی دکان کھولنے نکلا ہوں: راہل گاندھی

www.samajnews.in

ہنگامہ ہے کیو ں پرپا اسمرتی ایرانی کے جانے پر

www.samajnews.in

پاکستان نے ورلڈ کپ 2023 میں رقم کی تاریخ،400رنز بناکر ہاری نیوزی لینڈ

www.samajnews.in