45.1 C
Delhi
مئی 29, 2024
Samaj News

جہلم توی فلڈ ریکوری پروجیکٹ کے میگا پروجیکٹس

جموں و کشمیر میں تبدیلی کا وسیلہ بن کر ابھر رہے ہیں:

جموں و کشمیر کے بنیادی ڈھانچے کے منظر نامے کی ایک بڑی تبدیلی میں، عالمی بینک کی مالی اعانت سے چلنے والے جہلم توی فلڈ ریکوری پروجیکٹ ( جے ٹی ایف آر پیز)کے میگا پروجیکٹ پورے خطے میں تبدیلی کے اہم ویسلہ کے طور پر کام کر رہے ہیں۔جے کے ای آر اے اور جے ٹی ایف آر پی کے چیف ایگزیکٹیو آفیسر ڈاکٹر سید عابد رشید شاہ نے کہا، "ہم منصوبوں کی رفتار کو برقرار رکھنے کی پوری کوشش کر رہے ہیں۔” انہوں نے مزید کہا کہ ہمیں خوشی ہے کہ جے ٹی ایف آر پی کے ذریعے شروع کیے گئے منصوبے زمینی سطح پر کچھ نشان بنا رہے ہیں اور تبدیلی کے ایجنٹ کے طور پر کام کر رہے ہیں۔ سی ای او نے یہ بھی کہا، "جموں و کشمیر سیلاب، زلزلے، طوفانی سیلاب، برفانی تودے وغیرہ جیسی متعدد آفات کا شکار ہے اور ان آفات سے نمٹنے کے نظام کو مضبوط بنانے کے لیے، ہم نے حال ہی میں جے ٹی ایف آر پی میں کئی اقدامات کیے ہیں اور ملٹی ہزارڈ پر ایک روزہ ورکشاپ کا انعقاد کیا ہے۔یاد رہے کہ اس سلسلے میں، اقتصادی امور کے محکمے ، مرکزی وزارت خزانہ، حکومت ہند نے ورچوئل کے دوران عالمی بینک کی مالی اعانت سے چلنے والے منصوبوں جے ٹی ایف آر پی کے کامیاب نفاذ کے لیے جموں و کشمیر حکومت کی تعریف کی ہے۔ سہ فریقی پورٹ فولیو جائزہ اجلاس حال ہی میں منعقد ہوا۔ بینک کی ٹیم نے بتایا کہ اس منصوبے نے گزشتہ 1.5 سالوں میں قابل ذکر پیش رفت کی ہے اور توسیع کے مکمل ہونے کے بعد تمام سنگ میلوں پر اتفاق کیا گیا ہے۔بینک کی ٹیم نے مشاہدہ کیا کہ "آج تک کی کل تقسیم کا 80% واقعی پچھلے ایک سال میں حاصل کیا گیا ہے۔”سی ای آر سی کے نفاذ میں آکسیجن پیدا کرنے والے پلانٹس سمیت اچھی پیش رفت ہوئی ہے۔ جب کہ اہم خدشات جن کو پراجیکٹ فوکس میں دور کرنے کی ضرورت ہے مالی اور جسمانی پیشرفت کے درمیان فرق کو ختم کرنے کے لیے درکار دو پیچھے رہنے والے پی آئی یوز کی کارکردگی کو بہتر بنایا، برج ورکس اور ہسپتالوں پر ای آئی اے؍ ای ایم پی کی اپ ڈیٹ اور افشاء، اور اس میں خلاء کو دور کیا۔پراجیکٹ ٹیم نے اس بات کی توثیق کی ہے کہ یہ منصوبہ پچھلے 1.5 سالوں میں پیش رفت دکھانے کے قابل تھا۔ پروجیکٹ نے تقسیم کے اہداف سے تجاوز کیا اور آخری TPRM میں تمام متفقہ اقدامات کو حاصل کیا۔بینک کی ٹیم نے ورچوئل میٹنگ کے دوران سراہتے ہوئے کہا، "اس پروجیکٹ نے دیہی علاقوں میں مثبت پیش رفت دکھائی ہے اور کووڈ کے اوقات میں بنیادی اور ثانوی صحت کی دیکھ بھال کے مراکز میں صلاحیتوں کو بڑھا کر یو ٹی کی مدد کی ہے۔ ڈی ای اے نے ورلڈ بینک، اور پروجیکٹ اتھارٹی کے درمیان مجازی سہ فریقی پورٹ فولیو ریویو میٹنگ’ (TPRM) کے دوران پروجیکٹ کے نفاذ کی تعریف ریکارڈ کی ہے- مزید مشاہدہ کرتے ہوئے کہ اب مینجمنٹ کی معلومات کی ہفتہ وار اپ ڈیٹ کے ساتھ پروجیکٹ کی ہفتہ وار نگرانی کی جا رہی تھی۔ٹی پی آر ایم، جس نے ملک بھر میں عالمی بینک کی طرف سے فنڈ کیے گئے مختلف پروجیکٹوں کی پیش رفت کا جائزہ لیا، اس میں ڈی ای اے (محکمہ اقتصادی امور( وزارت خزانہ، حکومت ہند، عالمی بینک، اور مختلف ای اے کے سینئر افسران نے شرکت کی۔ میٹنگ میں جموں و کشمیر میں عالمی بینک کی مالی اعانت سے 250 ملین امریکی ڈالر کے جہلم توی فلڈ ریکوری پروجیکٹ کے نفاذ میں نمایاں بہتری پر بے حد اطمینان کا اظہار کیا گیا۔ قبل ازیں میٹنگ میں بتایا گیا کہ اگلے 5 سے 6 ماہ میں ادائیگیوں میں بہتری آنی ہے۔ میٹنگ کے دوران متفقہ طور پر اس بات پر اتفاق کیا گیا کہ جموں و کشمیر حکومت کو بینک کے مالی سال 2021 میں 40.00 ملین امریکی ڈالر کی تقسیم کا ہدف حاصل کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔ اجلاس میں یہ بھی ریکارڈ کیا گیا کہ گزشتہ ایک سال میں اس منصوبے میں زبردست پیش رفت ہوئی ہے اور اسے برقرار رکھا جائے۔ میٹنگ کے مطابق، سی ای آر سی کے جزو کے لیے 50 ملین امریکی ڈالر کی رقم مختص کی گئی ہے۔ سی ای او، جے کے ای آر اے اور جے ٹی ایف آر پی، ڈاکٹر سید عابد رشید شاہ نے کہا، "ہم ڈی ای اے کی طرف سے مقرر کردہ پچھلے اہداف سے آگے بڑھ چکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ان کی ٹیم روزی روٹی کی مضبوطی اور بحالی اور عالمی بینک کی مالی اعانت سے چلنے والے جے ٹی ایف آر پی کے اہم بنیادی ڈھانچے کی مضبوطی کے جزو پر اہم ترقیاتی منصوبوں کو مکمل کرنے کے لیے ہر ممکن طریقے سے اپنی بہترین کوششیں جاری رکھے گی۔ سی ای او نے یقین دہانی کرائی کہ "منصوبے کے نفاذ میں بڑی بہتری کی وجہ سے تقسیم کا نیا ہدف پہلے سے ہی پورا ہو جائے گا۔ جے ٹی ایف آر پی پروجیکٹ کے 7 حصے ہیں جن میں عالمی بینک کی مالی اعانت شامل ہے جس میں اہم انفراسٹرکچر کی تعمیر نو اور مضبوطی، سڑکوں اور پلوں کی تعمیر نو، اربن فلڈ مینجمنٹ سسٹم کی بحالی، ذریعہ معاش کی بحالی اور مضبوطی، ڈیزاسٹر رسک مینجمنٹ کو مضبوط بنانا شامل ہیں۔

Related posts

’لو جہاد‘ قانون پر فوری روک لگانے سے عدالت عظمیٰ کا انکار

www.samajnews.in

زمبابوے میں چین کے کان کنی کے منصوبوں پر عوامی تشویش میں اضافہ

www.samajnews.in

In India, Iranian Shia Muslim Maulana Mehdi Mahdavi Puri should stop mob lynching of all poor Indian believers. Maulana Rajani Hassan Ali”

www.samajnews.in